پہلی صدی کے رسول مسیحیت کی بحالی
یسوع ، مسیحا۔
یسوع ، مسیحا۔

یسوع ، مسیحا۔

یسوع مسیحا۔

مناسب وقت پر، خدا نے اپنے بندے یسوع (یسوع) کو برپا کیا تاکہ لوگوں کو ان کی برائیوں سے باز رکھا جائے، (اعمال 3:26) جیسا کہ موسیٰ نے کہا، "خداوند تیرا خدا تیرے لیے تیرے ہی لوگوں میں سے مجھ جیسا ایک نبی برپا کرے گا۔ . جو کچھ وہ آپ سے کہے آپ کو سننا چاہیے۔ اور ایسا ہو گا کہ ہر وہ جان جو اُس نبی کی بات نہیں مانے گی لوگوں میں سے تباہ کر دی جائے گی۔‘‘ (اعمال 3:22-23) وہ خدا کا چُنا ہوا بیٹا ہے جسے خدا ہمیں سننے کا حکم دیتا ہے۔ (لوقا 9:35) وہ ہماری آنکھیں کھولنے کے لیے آیا تھا، تاکہ ہم اندھیرے سے روشنی کی طرف اور شیطان کی طاقت سے خُدا کی طرف لوٹیں، تاکہ ہمیں گناہوں کی معافی اور اُن لوگوں میں جگہ ملے جو اُس پر ایمان لانے سے پاک ہیں۔ . (اعمال 26:18) اور اُس نے اپنے گواہوں کو حکم دیا کہ وہ لوگوں کو منادی کریں اور گواہی دیں کہ وہ وہی ہے جسے خدا نے زندہ اور مُردوں کا جج مقرر کیا ہے۔ (اعمال 10:42)

یسوع نے اپنے اختیار سے کچھ نہیں کیا، لیکن وہ کام کیے جیسا کہ باپ نے اسے سکھایا، ’’میں اپنی مرضی نہیں چاہتا بلکہ اُس کی مرضی چاہتا ہوں جس نے مجھے بھیجا‘‘ (یوحنا 5:30)۔ وہ آدمی ہونے کے ناطے جسے باپ نے پاک کیا اور دنیا میں بھیجا، اس نے یہ کہنے کے لیے کوئی کفر نہیں کیا کہ وہ باپ کے ساتھ ایک ہے۔ (یوحنا 10:35-36) اور اُس نے وہ کام پورا کر دیا جو باپ نے اُسے کرنے کے لیے دیا تھا۔ (یوحنا 17:4) اسی طرح ہمیں خدا کے ساتھ ایک ہونا ہے، اتحاد میں کامل ہونا، جیسا کہ مسیح باپ کے ساتھ ایک تھا نہ کہ اس دنیا کے۔ (یوحنا 17:22-23)

یسوع وہ آدمی ہے جو خدا کی طرف سے زبردست کاموں اور عجائبات اور نشانوں کے ساتھ ثابت ہوا جو خدا نے اس کے ذریعے کیا۔ (اعمال 2:22) کیونکہ خُدا نے یسوع ناصری کو روح القدس اور قدرت سے مسح کیا، اور وہ اِدھر اُدھر اچھا کام کرتا اور اُن سب کو شفا دیتا جو ابلیس سے ستائے گئے تھے، کیونکہ خُدا اُس کے ساتھ تھا۔ (اعمال 10:38) اسے موت کے گھاٹ اتار دیا گیا، لیکن خدا نے اسے تیسرے دن زندہ کر کے پیش ہونے کی اجازت دی۔ (اعمال 2:32) خدا کے طے شدہ منصوبے اور پیشگی علم کے مطابق حوالگی کے بعد، (اعمال 2:23) اب وہ خدا کے دائیں ہاتھ پر سرفراز ہے (اعمال 2:33) اس لئے باپ نے اسے خداوند اور مسیح دونوں بنایا ہے۔ . (اعمال 2:36) آسمان نے اُسے اُن تمام چیزوں کی بحالی کی مدت تک حاصل کیا جن کے بارے میں خُدا نے قدیم زمانے سے اپنے مقدس نبیوں کے منہ سے کہا تھا۔ (اعمال 3:21)

یہ ابدی زندگی ہے، تاکہ ہم واحد سچے خُدا کو اور مسیح یسوع کو جانیں جسے اُس نے بھیجا ہے۔ (یوحنا 17:3) ابن آدم کو اوپر اٹھایا گیا، تاکہ جو کوئی اس پر ایمان لائے وہ ہمیشہ کی زندگی پائے۔ کیونکہ خُدا نے دُنیا سے اِس قدر پیار کیا کہ اُس نے اپنا اکلوتا بیٹا بخش دیا تاکہ جو کوئی اُس پر ایمان لائے ہلاک نہ ہو بلکہ ہمیشہ کی زندگی پائے۔ (یوحنا 3:14-16) وہی راستہ، سچائی اور زندگی ہے۔ کوئی بھی باپ کے پاس اس کے ذریعے نہیں آتا۔ (یوحنا 14:6) اور آسمان کے نیچے انسانوں کے درمیان کوئی دوسرا نام نہیں دیا گیا ہے جس سے ہم نجات پا سکتے ہیں۔ (اعمال 4:12) ابن آدم پر، خدا نے اپنی مہر لگائی ہے۔ (یوحنا 6:27) اُس کے لیے تمام نبی گواہی دیتے ہیں کہ جو بھی اُس پر ایمان لاتا ہے اُسے گناہوں کی معافی مل جاتی ہے۔ (اعمال 10:43)

ہمارا نجات دہندہ خُدا، چاہتا ہے کہ تمام لوگ نجات پائیں اور سچائی کے علم میں آئیں۔ کیونکہ خدا ایک ہے، اور خدا اور انسانوں کے درمیان ایک ہی ثالث ہے، وہ آدمی مسیح یسوع، جس نے اپنے آپ کو سب کے لیے فدیہ کے طور پر دے دیا۔ (1 تیمتھیس 2:4-6) اس میں ایک ثالث ایک سے زیادہ فریقوں کو شامل کرتا ہے، اور جب کہ خُدا ایک ہے، (گلتیوں 3:20) مسیح نے خود کو اعلیٰ کاہن بنانے کے لیے نہیں بنایا، بلکہ اُس کی طرف سے مقرر کیا گیا جس نے کہا۔ اس سے کہا، "تم میرے بیٹے ہو، آج میں نے تمہیں جنم دیا ہے۔" (عبرانیوں 5:5) کیونکہ ہر ایک سردار کاہن جو آدمیوں میں سے چُنا جاتا ہے خدا کے سلسلے میں آدمیوں کی طرف سے کام کرنے، گُناہوں کے لیے نذرانے اور قربانیاں پیش کرنے کے لیے مقرر کیا جاتا ہے۔ (عبرانیوں 5:1) ایک نئے عہد کے ثالث یسوع نے اپنے خون سے ہمیں ہمارے گناہوں سے آزاد کرایا ہے۔ (مکاشفہ 1:5)

جیسا کہ باپ زندہ ہے، یسوع باپ کی وجہ سے زندہ ہے، تاکہ جو اس کے پاس آئے وہ زندہ رہے اور آخری دن جی اُٹھے۔ (یوحنا 6:57) وہ وقت آنے والا ہے جب مردے خدا کے بیٹے کی آواز سنیں گے اور جو سنیں گے وہ زندہ ہوں گے۔ موجود نہیں ہے، اس لیے اس نے بیٹے کو بھی اپنے اندر زندگی عطا کی ہے تاکہ وہ اپنے ساتھ سو گئے ہوں۔ (یوحنا 5:25) باپ نے اپنے بیٹے کو ہمیشہ کی زندگی دینے کے لیے تمام جسموں پر اختیار دیا ہے۔ (یوحنا 5:26) اور اُسے فیصلے کرنے کا اختیار دیا گیا ہے، کیونکہ وہ ابنِ آدم ہے۔ (یوحنا 17:2)

پہلا انسان آدم زندہ روح بن گیا۔ آخری آدم زندگی بخشنے والی روح بن گیا۔ (1 کرنتھیوں 15:45) گناہ ایک آدمی کے ذریعے دنیا میں داخل ہوا، اور موت گناہ کے ذریعے، چنانچہ موت سب میں پھیل گئی – یہاں تک کہ ان لوگوں پر بھی جنہوں نے آدم کے جرم کی طرح گناہ نہیں کیا تھا، جو اس کی ایک قسم تھا۔ آنا تھا. (رومیوں 5:12-14) جس طرح ایک آدمی کی نافرمانی سے بہت سے لوگ گنہگار ہوئے، اسی طرح ایک کی فرمانبرداری سے بہت سے لوگ راستباز بنائے جائیں گے۔ (رومیوں 5:19) چونکہ ایک آدمی کے ذریعے موت آئی، اسی طرح ایک آدمی کے ذریعے مردوں کا جی اٹھنا بھی آیا۔ کیونکہ جیسے آدم میں سب مرتے ہیں اسی طرح مسیح میں بھی سب زندہ کیے جائیں گے۔ (1 کرنتھیوں 15:21-22) مقررہ وقت پر مسیح میں مُردے لافانی جی اُٹھیں گے۔ فانی لافانی لباس پہنیں گے۔ (1 کرنتھیوں 15:53-54) جس طرح ہم نے خاک کے آدمی کی شبیہ کو جنم دیا ہے، اسی طرح ہم آسمانی آدمی کی شبیہ بھی اٹھائیں گے۔ (1 کرنتھیوں 15:49)

آسمان بہت پہلے موجود تھے، اور زمین خدا کے کلام سے بنی تھی۔ (2 پطرس 3:5) دُنیا کی بنیاد سے، عقل باپ کے پاس تھی اور سب چیزیں اُس کے ذریعے سے بنی تھیں۔ (یوحنا 1:1-3) وقت کی معموری میں، خدا کے کلام کے ذریعے، زندگی ظاہر ہوئی، اور یہ زندگی انسان کی روشنی تھی۔ (یوحنا 1:4) اُس ابدی مقصد کے مطابق جسے خُدا نے مسیح یسوع ہمارے خُداوند میں محسوس کیا ہے، ہم اُس اسرار کے منصوبے کا اعلان کرتے ہیں جو زمانے کے لیے خُدا میں پوشیدہ ہے جس نے تمام چیزوں کو تخلیق کیا، تمام چیزوں کو یکجا کرنے کے لیے وقت کی تکمیل کے منصوبے کے طور پر۔ اپنے آپ کو. (افسیوں 1:9-10) الہٰی کلام کے ذریعے، آسمان اور زمین جو اب موجود ہیں، آگ کے لیے محفوظ کیے گئے ہیں، بے دینوں کی عدالت اور تباہی کے دن تک رکھے جاتے ہیں۔ خُداوند اپنے وعدے کو پورا کرنے کے لیے صبر کرتا ہے، یہ نہیں چاہتا کہ کوئی ہلاک ہو جائے، بلکہ یہ کہ سب توبہ تک پہنچ جائیں۔ (2 پطرس 3:7-9)

عیسیٰ کی گواہی نبوت کی روح ہے۔ (مکاشفہ 19:10) وہ جو وفادار اور سچا کہلاتا ہے، راستبازی میں فیصلہ کرے گا اور جنگ کرے گا۔ (مکاشفہ 19:11) جس نام سے وہ پکارا جاتا ہے وہ خدا کا کلام ہے اور آسمان کی فوجیں اس کی پیروی کریں گی۔ اُس کے منہ سے ایک تیز تلوار نکلے گی جس سے قوموں کو مارا جائے گا اور وہ اُن پر حکومت کرے گا۔ وہ خُدا قادرِ مطلق کے غضب کے غضب کے حوض کو روندے گا۔ (مکاشفہ 19:13-15) اسے اس وقت تک حکومت کرنی چاہئے جب تک کہ وہ اپنے تمام دشمنوں کو اپنے پاؤں تلے نہ کر دے۔ موت سمیت. (1 کرنتھیوں 15:25-26) پھر اختتام آتا ہے، جب وہ ہر قاعدے اور ہر اختیار اور طاقت کو تباہ کرنے کے بعد بادشاہی خدا باپ کے حوالے کرتا ہے۔ (1 کرنتھیوں 15:24) آخرکار، جب سب چیزیں اُس کے تابع کر دی جائیں گی، تو بیٹا خود بھی اُس کے تابع ہو جائے گا جس نے سب کچھ اُس کے تابع کر دیا، تاکہ خُدا سب میں سب کچھ ہو۔ (1 کرنتھیوں 15:28) خُداوند کا دن آئے گا اور پھر آسمان ایک گرج کے ساتھ ٹل جائے گا، اور آسمانی اجسام جل کر تحلیل ہو جائیں گے۔ (2 پطرس 3:10) لیکن اُس کے وعدے کے مطابق ہم نئے آسمانوں اور نئی زمین کا انتظار کر رہے ہیں جس میں راستبازی بسی ہوئی ہے۔ (2 پطرس 3:13)

یسوع تمام مخلوقات میں پہلوٹھا ہے۔ (کلسیوں 1:15) یہ باپ کی خوشنودی ہے کہ وہ اس کے ذریعے تمام چیزوں کو اپنے ساتھ جوڑ لے۔ (کلسیوں 1:19-20) اب ہم مسیح یسوع کے ذریعے موجود ہیں۔ (1 کرنتھیوں 8:6) کیونکہ خدا نے ہر چیز کو اپنے پیروں کے نیچے رکھا ہے۔ (1 کرنتھیوں 15:27) وہ ابتدا ہے، مُردوں میں سے پہلوٹھا، تاکہ وہ خود ہر چیز میں اول مقام حاصل کرے۔ (کلسیوں 1:18) وہ مر گیا اور دیکھو وہ ابد تک زندہ ہے، اور موت اور پاتال کی کنجیاں اس کے پاس ہیں۔ (مکاشفہ 1:17-18) یہوداہ کے قبیلے کے شیر نے، داؤد کی جڑ، فتح کر لی ہے۔ (مکاشفہ 5:5) جس نے ہمیں ایک بادشاہی بنایا، اپنے خدا اور باپ کے کاہن، ہمیشہ کے لیے جلال اور بادشاہی ہو۔ (مکاشفہ 1:6) مبارک ہے وہ بادشاہ جو خداوند کے نام پر آتا ہے! (لوقا 19:38)

ایک خُدا ہے، باپ جس کی طرف سے سب چیزیں ہیں اور جس کے لیے ہم وجود رکھتے ہیں، اور ایک خُداوند ہے، یسوع مسیح، جس کے ذریعے ہم وجود رکھتے ہیں۔ (1 کرنتھیوں 8:6) باپ بیٹے سے پیار کرتا ہے اور اس نے سب کچھ اس کے ہاتھ میں دے دیا ہے۔ (یوحنا 3:35) جو کوئی بیٹے پر ایمان رکھتا ہے اس کی ہمیشہ کی زندگی ہے۔ جو بیٹے کا کہنا نہیں مانے گا وہ زندگی کو نہیں دیکھے گا، لیکن خدا کا غضب اس پر رہتا ہے۔ (یوحنا 3:36) اب بھی، کلہاڑی درختوں کی جڑوں پر رکھی گئی ہے۔ پس ہر وہ درخت جو اچھا پھل نہیں لاتا کاٹ کر آگ میں ڈالا جاتا ہے۔ (لوقا 3:9) اس مجرمانہ دور سے نجات پانے اور روح القدس کا وعدہ حاصل کرنے کے لیے، ہمیں توبہ کرنی چاہیے اور اپنے گناہوں کی معافی کے لیے یسوع مسیح کے نام پر بپتسمہ لینا چاہیے۔ (اعمال 2:38) وہی ہے جو روح القدس اور آگ سے بپتسمہ دیتا ہے۔ (لوقا 3:16) اُس کے ذریعے ہمارے پاس گود لینے والے بیٹے ہیں (گلتیوں 4: 4-5) اور ہمارے خُداوند اور اُس کے مسیح کی آنے والی بادشاہی میں وراثت ہے اِس لیے ہم منادی کرتے ہیں، "وقت پورا ہو گیا، اور خُدا کی بادشاہی۔ قریب ہے، توبہ کرو اور انجیل پر یقین کرو۔" (مرقس 1:15)